Voice of Khyber Pakhtunkhwa
Monday, January 30, 2023

صدر مملکت کا ایئر ہیڈ کوارٹرز کا دورہ

 سنٹر برائے ایرو اسپیس اینڈ سیکیورٹی اسٹڈیز کے زیر اہتمام دو روزہ بین الاقوامی فلیگ شپ سیمینار بعنوان ’’گلوبل اسٹریٹجک تھریٹ اینڈ ریسپانس‘‘(جی سٹار) کی افتتاحی تقریب آج ائیر ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد میں منعقد ہوئی۔ اس موقع پر صدر اسلامی جمہوریہ پاکستان ڈاکٹر عارف علوی مہمان خصوصی تھے۔ ائیر ہیڈ کوارٹرز اسلام آباد پہنچنے پر سربراہ پاک فضائیہ ائیر چیف مارشل ظہیر احمد بابر سدھو نے ان کا استقبال کیا۔

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے اپنے افتتاحی خطاب میں پاک فضائیہ کے علم کے شعبے کو اپنی کارروائیوں میں زیادہ سے زیادہ بروئے کار لانے کے لئے کیے گئے کلیدی اقدامات کو سراہا ۔ صدر نے عصرِ حاضر کے اسٹریٹجک مسائل پر فکر انگیز سیمینار کے انعقاد پر سنٹر برائے ایرو اسپیس اینڈ سیکیورٹی اسٹڈیز  کی انتظامیہ کو سراہا۔ عالمی سیاست کے پیچیدہ مسائل نے طاقت کے روایتی توازن اور  سیکیورٹی کے ماحول کو متاثر کیا ہے اور یہ امر قومی ہم آہنگی کے ذریعے مناسب ردعمل کا متقاضی ہے۔ انہوں نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ موجودہ دور میں ٹیکنالوجی اور دولت کے اشتراک سے طاقت کے نئے مراکز کی تشکیل ہو رہی ہے۔ انہوں نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ ‘انسانوں کی برابری، انسانی سلامتی کے احترام، نئی ٹیکنالوجی کے استعمال اور امن کے عزم کی بنیاد پر ایک نئی ترتیب کی تعمیر کی ضرورت ہے’۔

قبل ازیں سربراہ پاک فضائیہ نے اپنی استقبالیہ تقریر میں اس بات پر روشنی ڈالی کے بڑی طاقتوں کے درمیان بڑھتی ہوئی دشمنی کے نتیجے میں بین الاقوامی ادارے کمزور ہو رہے ہیں اور روایتی اور غیر روایتی سیکیورٹی کے مسائل بڑھ رہے ہیں۔ نئی ٹیکنالوجی کے تناظر میں، انہوں نے منتخب اشتراک کے خطرناک نتائج اور علاقائی استحکام پر اس کے اثرات کی طرف اشارہ کیا۔ ایئر چیف نے ان ٹیکنالوجیز کے چیلنجوں سے نمٹنے کے لیے بین الاقوامی اتفاق رائے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے پاک فضائیہ کے قومی مفادات کے تحفظ کے لیے اپنا کردار ادا کرنے کے عزم کا اعادہ کیا اور پاک فضائیہ کو ایک جدید فورس بنانے کے لیے آپریشنز، صلاحیتوں میں اضافہ، تنظیم اور تربیت سمیت مختلف شعبوں میں اہم اقدامات کے بارے میں سامعین کو آگاہ کیا۔ سربراہ پاک فضائیہ نے نیشنل ایرو اسپیس اینڈ ٹکنالوجی پارک (NASTP) کے باضابطہ آغاز کا اعلان بھی کیا جس کا مقصد ملک میں مقامی صلاحیتوں کے بل بوتے پر ٹیکنالوجی کے حصول کی مہم کو تیز کرنا ہے۔ اپنی نوعیت کے پہلے پارک کا افتتاح اس سال کیا جائے گا جبکہ دو دیگر ٹیکنالوجی پارک جلد ہی قائم ہوں گے۔

بعد ازاں صدر  ڈاکٹر عارف علوی نے سربراہ پاک فضائیہ سے  ان کے دفتر میں  ملاقات کی۔  ملاقات کے دوران صدرِ پاکستان کو پاک فضائیہ کی آپریشنل صلاحیتوں اور قومی سلامتی کو لاحق کسی بھی بیرونی خطرے سے نمٹنے کے لیے کی گئی آپریشنل تیاریوں کے بارے میں بریفنگ دی گئی۔ ایئر چیف نے پاک فضائیہ کے ایرو اسپیس، سائبر، آئی ٹی اور آرٹیفیشل انٹیلی جنس کے شعبوں میں قائم شدہ اور نئی ابھرتی ہوئی ڈسرپٹو ٹیکنالوجیز کی ملکی سطح پر صلاحیتوں میں اضافے کے جامع منصوبے پر روشنی ڈالی۔ پاکستان کی سرحدوں کے دفاع میں پاک فضائیہ کے کردار کو سراہتے ہوئے صدرِ پاکستان نے عصرِ حاضر کے جغرافیائی اور سیاسی ماحول میں فضائیہ کی اہمیت کو اجاگر کیا۔ انہوں نے پاک فضائیہ کی آپریشنل تیاریوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ ملک کو اپنی بہادر مسلح افواج پر فخر ہے۔ انہوں نے ملک کے دفاع کی ذمےداری  کے ساتھ ساتھ قدرتی آفات سے نمٹنے میں حکومت پاکستان کو تعاون فراہم کرنے پر پاک فضائیہ کی تعریف کی۔ انہوں نے پاک فضائیہ کی قیادت پر مکمل اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاک فضائیہ انسانی وسائل، تکنیکی، آپریشنل اور صنعتی شعبوں میں ترقی و برتری حاصل کرنے کی راہ پر تیزی سے گامزن ہے اور صحیح معنوں میں قوم کا سرمایہ افتخار ہے

About the author

Leave a Comment

Add a Comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Shopping Basket